Top Daily Quotes

شیطان کا سچ

Shetan ka sach 1 Top Daily Quotes

ایک با ر کہیں سے کچھ سامان اور کھانے پینے کی چیزیں آئیں ۔انُ کو جمع کر کے ایک جگہ ڈھیر لگا دیا گیا۔ اس ڈھیر پر حضرت ابوھریرہؓ کو پہردار مقرر کیا گیا ، حضرت ابو ہریرہ ؓ فرماتے ہیں کہ رات کےوقت جب میں پہرہ دے رہا تھا ۔تو میں نے دیکھا ایک شخص آکر اُس ڈھیر سے چوری کرنے لگا ۔ میں نے فوراً جا کر اُسے پکڑ لیا اور کہا کہ صبح تجھے حضورﷺ کے دربار میں پیش کروں گا ،تیری اس چوری کے جرم کا فیصلہ ہو گا ۔ حضرت ابوھریرہ ؓ فرماتے ہیں وہ شخص میر ی منت سماجت کرنے لگا اور کہا میں بے حد محتا ج اور بھوکا پیاسا ہوں ، میرے بال بچے بھی بھوکے ہیں ، تم مجھ پر اور میرے بال بچوں پر رحم کھاؤ مجھے چھوڑ دو۔ حضرت ابوھریرہؓ کو اُس کی غربت اور محتاجی پر ترس آگیا اور اُسے چھوڑ دیا۔ اِدھر حضرت ابوھریرہؓ سے اُس شخص کی بات ہو رہی تھی اُدھر اللہ رب العزت نے بذریعہ وحی رسول اللہﷺ کو اس پورے واقعہ کی اطلاع دے دی۔ صبح کے وقت حضرت ابوھریرہؓ جب حضور ؐ کی خدمت میں حاضر ہوئے تو آپؐ نے حضرت ابوھریرہؓ سے پوچھا کہ بتاؤ رات والے قیدی کا کیا بنا ؟۔۔ اُنہوں نے عرض کیا میں نے اُسے پکر لیا تھا ۔ لیکن اے اللہ کے رسولؐ اُس نے اپنی اور بال بچوں کی بھوک اور محتاجی کا واسطہ دیا تو مجھے اُس پرترس آگیا اور میں نے چھوڑ دیا۔ حضور ؐ نے فرمایا اُس نے جھوٹ بولا وہ آج رات پھر آئے گا،آج اُسے نہ چھوڑنا۔ ۔ حضرت ابوھریرہؓ فرماتے ہیں آپؐ کے فرمانے کے بعد مجھے یقین تھاکہ وہ ضرور آئے گا ۔ میں اُس کے انتظار میں بیٹھ گیا ۔رات تھوڑی ہی گزری تھی کہ وہ شخص پھر آگیا چوری کرنا شروع کی میں نے جا کر اُسے پکڑ لیا ،اور کہا صبح ضرور تجھے حضورؐ کی خد مت میں پیش کروں گا۔ حضرت ابوھریرہؓ فرماتے ہیں اس بار بھی اُس نے میری منت سماجت کی ، اپنی بھوک اور محتاجی کا واسطہ دیا اور ساتھ یہ بھی کہا کہ آج چھوڑ دو پھر نہیں آؤں گا ۔مجھے اُسکی محتاجی اور غریبی پر رحم آگیا اور میں نے اُسے چھوڑدیا۔ صبح کے وقت پھرآپؐ نے پھر فرمایا ابوہریرہ رات تیرے قیدی کیا بنا ؟۔ فرماتے ہیں میں نے رات کا سارا واقعہ عرض کر دیا کہ رات مجھے پھر اُس پہ ترس آگیا میں نے اُسے چھوڑ دیا ۔آپؐ نے فرمایا اُس نے جھوٹ بولاہے آج پھر آئے گا کیال رکھنا۔حضرت ابوھریرہؓ فرماتے ہیں کہ آج پھر اُس کے انتظار میں بیٹھ گیا  مجھے شدید غصہ بھی تھا کہ روز نا آنے کا وعدہ کر کے پھر آجاتا ہے۔ آج تو ہر گز نہیں چھوڑوں گا۔ چناچہ رات کے وقت وہ شخص پھر آگیا اُس نے چوری کرنا شروع کی میں نے اُسے پکڑ لیا اور کہا روزانہ جھوٹ بولتے ہوآج نہیں چھوڑوں گا۔ وہ پھر منت سماجت کرنے لگا ،مگر میں نے نہیں چھوڑا۔ بالآخر وہ کہنے لگا اگر مجھے چھوڑدو تو میں ایک ایسی کام کی بات بتاؤں گا جو دین دُنیا کے اعتبار سے فائدہ مند ہوگی۔ حضرت ابوھریرہؓ فرماتے ہیں میں نے سوچا کہ اس کو چھوڑنے سے اگر دین کی کوئی فائدے مند بات مل جائے تو یہ سودا مہنگا نہیں۔لہذا اس وعدے پر میں نے اُسے چھوڑدیا۔ اُس نے مجھے بتایا کہ رات جب سونے کیلئے بسترپر آؤتو آیت الکُرسی پڑھ لیا کرو ۔ایسا کرنے سے پوری رات اللہ کی طرف سے ایک محافظ آپ کی حفاظت کرے گا اور پوری رات شیاطین اور جنات آپ کے قریب نہیں آئینگے ۔ ۔صبح کے وقت حضرت ابوھریرہؓ نے یہ واقعہ آپؐ کی خدمت میں عرض کیااور بتایا کہ اُس چور نے مجھے یہ وظیفہ بتایا آپؐ نے سُن کر فرمایا اے حضرت ابوھریرہ تجھے پتہ ہے وہ چورتھا کون ؟ وہ شیطان تھا جو تمہیں دھوکہ دیتا رہا اور جھوٹ بولتا رہا ۔تھا تو بہت بڑا جھوٹا لیکن یہ ایک سچی بات بتا گیاواقعی آیتُ الکرسی کی یہ خصوصیت ہے ۔ جو رات کو پڑھتا ہے اللہ کی طرف ایک حفاظت کرنے والا اُس کی نگرانی کرتا ہےاور پوری رات شیاطین اور جنات اُس کے قریب نہیں آتے۔

مزید واقعات پڑہیں